Welcome

Welcome to official website of PRES

تھرکول گیس سے بجلی کا حصول جلد ممکن

اسلام آباد۔ تھر کے ریگستان میں موجود اربوں ٹن کوئلے سے گیس پیدا کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ تھرکول گیس سے جلد ہی بجلی بنانے میں بھی کامیاب ہو جائیں گے۔کوئلے سے گیس کے حصول کے بعدملک میں جاری توانائی کے شدید بحران ککے حل ہونے کی امید کی کرن جاگ اٹھی ہے۔ انڈرگراﺅنڈ گیس فکیشن منصوبہ کوئلے سے گیس بنانے کا دنیاکا سب سے بڑامنصوبہ ہے۔ پاکستان واحد ملک ہے جو منصوبے کا کمپیوٹرائزڈ کمانڈ اینڈ کنٹرول سے چلائے گا۔ اس بات کو تھر بلوک بائیو میں ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر ثمر مبارک مندکے پروجیکٹ منیجنگ ڈائریکٹر ڈاکٹر محمد شبیر نے میڈیا سے گفتگو کرتے کہا۔ انھوں نے بتایا کہ گیس سے بجلی بنانے کے منصوبے میں متعدد گروپس دلچسپی لے رہے ہیں تاہم سندھ حکومت نے منظم طریقے سے سرمایہ کاری کے لئے تھر یو جی سی کمپنی قائم کر دی ہے۔ تھرکول دنیا کا تیسرا بڑا کوئلے کا ذخیرہ ہے، بدقسمتی سے آج تک اس سے ایک کلو بھی کوئلہ نہیں نکالا گیا۔ ان کے مطابق تھر کول بلاک فائیو میں ایک اعشاریہ چار ارب ٹن کوئلے کے ذخائر ہیں جن سے تیس سال تک دس ہزار میگاواٹ بجلی اور سالانہ سو ملین بیرل ڈیزل پیدا کیا جا سکتا ہے۔ انھوں نے بتایا کہ ۳۱۰۲ءکے آخر یا ۴۱۰۲ءکے آغاز تک ہم ۰۵ ہزار میگاواٹ بجلی کی پیداوار شروع کر دیں گے۔تھر کول کا ذخیرہ ایک بہت بڑا خزانہ ہے جس کا استعمال کرتے ہوئے پاکستان بجلی اور گیس دونوں ضروریات کو پورا کر سکتا ہے۔

Comments are closed.